کورونا کو دیکھتے ہوئے لوگوں کی مدد میں اترا بہارمدرسہ بورڈ– News18 Urdu

مدرسہ بورڈ کے چیئرمین عبدالقیوم انصاری نے نیوز 18 سے خاص بات چیت کرتے ہوئےکہا کہ اس سلسلے میں 120 مدارس کے سکریٹری اور انتظامیہ کمیٹی کے صدر کو ہدایت دے دی گئی ہے۔

بہار: کورونا کو دیکھتے ہوئے لوگوں کی مدد میں اترا بہارمدرسہ بورڈ، 120مدرسوں میں کرونٹائن کی سہولت کی تیاری

 ہندوستان میں کورونا وائرس کے اب تک 6040 کیس سامنے آ چکے ہیں۔ فائل فوٹو

پٹنہ: بہار میں کورونا مریضوں کی تعداد 23 ہوگئی ہے۔ پورے بہار میں لاک ڈاؤن ہے۔ بہار مدرسہ ایجوکیشن بورڈ نے پانچ لاکھ روپیہ وزیر اعلیٰ راحت فنڈ میں دیا ہے۔ ساتھ ہی صوبہ کے 38 ضلعوں میں 120 مدرسوں میں کرونٹائین کی سہولت کا انتظام کرنے کا اعلان کیا ہے۔ مدرسہ بورڈ کے چیئرمین عبدالقیوم انصاری نے نیوز 18 سے خاص بات چیت کرتے ہوئےکہا کہ اس سلسلے میں 120 مدارس کے سکریٹری اور انتظامیہ کمیٹی کے صدر کو ہدایت دے دی گئی ہے۔

ساتھ ہی تمام اضلاع کے ڈی ایم کو بھی اس سلسلے میں خط لکھا گیا ہے۔ ڈی ایم کو بھی اس کے تعلق سے مناسب کارروائی کرنےکی اپیل کی گئی ہے۔ مدرسہ بورڈ نے اعلان کیا ہےکہ اگر حالات خراب ہوتے ہیں تو اس سے نپٹنے کے لئے ریاست کےمدارس بھی اپنے طور سے تیار ہیں۔ مدرسہ بورڈ نے مدارس کو ہدایت دی ہے کہ کرونٹائین کی سہولت کے ساتھ ساتھ متاثرہ افراد کے کھانے پینےکا بھی انتظام کیا جائےگا۔ کورونا کے متاثرہ افراد کی مدد کے لئے مدرسہ بورڈ نے جہاں وزیر اعلیٰ راحت فنڈ میں رقم دیا ہے۔ وہیں عام لوگوں کو بھی ہر قیمت پر مدد پہنچانےکا منصوبہ بنایا ہے، جس میں کرونٹائین کی بھی ایک سہولت ہے۔ مدرسہ بورڈ نے مدرسہ سے وابستہ لوگوں کو خراب حالات میں تیار رہنےکی اپیل کی ہے۔

چیئرمین مدرسہ بورڈ کے مطابق کرونا کے خلاف حکومت کی لڑائی میں مدرسوں کی جانب سے پوری طرح سے تعاون کیا جارہا ہے۔

چیئرمین مدرسہ بورڈ کے مطابق کرونا کے خلاف حکومت کی لڑائی میں مدرسوں کی جانب سے پوری طرح سے تعاون کیا جارہا ہے۔

چیئرمین مدرسہ بورڈ کے مطابق کرونا کے خلاف حکومت کی لڑائی میں مدرسوں کی جانب سے پوری طرح سے تعاون کیا جارہا ہے۔ مدارس کے لوگ مقامی سطح پر لوگوں کو بیدار کرنےکی بھی کوشش کررہے ہیں۔ واضح رہےکہ رواں سال مدارس کے اساتذہ کو قدرتی آفات سے نمٹنےکی مکمل تربیت دی گئی تھی۔ یہ بیماری بھی ایک آفت ہے، جس کےخلاف حکومت لڑائی لڑ رہی ہے اور ڈاکٹرس لوگوں کی حفاظت اور انہیں بچانےکی کوشش کررہے ہیں۔ ایسے میں مدارس کے اساتذہ، انتظامیہ کمیٹی، مدارس کے سکریٹری اور مدرسہ بورڈ سے جوکچھ بھی ہوگا وہ مدرسہ بورڈ کرنےکو تیار ہے۔


Source link

اس بارے میں admin

یہ بھی دیکھیں

کیا حکومتی اقدامات سے بھارتی کشمیر میں علیحدگی پسند جماعتیں جمود کا شکار ہو گئی ہیں؟ 

سرینگر —  بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر میں حال ہی میں ہونے والے ضلعی ترقیاتی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *