پالتو بلیاں بھی کورونا کی منتقلی کا سبب بن سکتی ہیں: تحقیق -Daily Jang-Latest News-Health

پالتو بلیاں بھی کورونا کی منتقلی کا سبب بن سکتی ہیں: تحقیق

خبردار! پالتو بلیاں بھی کورونا وائرس کی گھروں اور لوگوں میں منتقلی کا سبب بن سکتی ہیں۔

چین میں ہونے والی نئی تحقیق کے مطابق مہلک وائرس ایک بلی سے دوسری بلی میں آسانی سے منتقل ہو سکتا ہے۔

نئی تحقیق میں اس بات کی تصدیق کی گئی ہے کہ پالتو جانوروں میں بلی کورونا وائرس سے سب سے زیادہ غیر محفوظ ہے۔

یہ تحقیق اس وقت سامنے آئی ہے جب ایک ہفتہ قبل ہی بیلجیئم میں کورونا وائرس کی شکار خاتون کی بلی بھی وائرس سے متاثر ہوئی تھی۔

طبی ماہرین کے مطابق کورونا وائرس کی بلیوں سے دوسری بلیوں میں منتقلی کی تصدیق تو ہوئی ہے لیکن بلیوں سے انسانوں میں وائرس کی منتقلی کی تصدیق ابھی نہیں ہو سکی ہے۔

واضح رہے کہ کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے احتیاط کے طور پر چین کے شہر شینزن میں بلی اور کتے کا گوشت کھانے پر پابندی عائد کی جا چکی ہے۔

یہ بھی پڑھیئے: چین، کورونا سے ہلاکتیں، 3 منٹ کی خاموشی، پرچم سرنگوں

چین میں تیزی سے کورونا وائرس کے کیسز سامنے آنے کے بعد کچھ سائنسدانوں کا کہنا تھا کہ یہ وائرس جانوروں سے انسان میں منتقل ہوتا ہے یعنی جو افراد، چمگادڑ، چوہوں، سانپ اور کتوں کا گوشت کھاتے ہیں ان پر کورونا وائرس کے حملے کا شبہ ظاہر کیا گیا تھا۔

ایسے میں شہر شینزن کے حکام نے کتے اور بلی کا گوشت کھانے پر پابندی عائد کر دی ہے۔




Source link

اس بارے میں admin

یہ بھی دیکھیں

موسم سرما کے پھلوں کے کیا فوائد ہیں؟

کینو، مالٹے، فروٹر، انار، انگور، سیب، ناشپاتی، امرود اور کیلے یہ تمام وہ پھل ہیں …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *