ٹرمپ اور بائیڈن کے درمیان کانٹے کا مقابلہ متوقع، سروے رپورٹ


اخبار واشنگٹن پوسٹ اور اے بی سی نیوز نیٹ ورک کے تازہ ترین سروے کے مطابق نومبر میں ہونے والے صدارتی انتخاب میں ٹرمپ اور بائیڈن کے درمیان کانٹے کا مقابلہ ہو گا۔

توقع ہے کہ کرونا وائرس کا زور ٹوٹنے کے بعد امریکہ میں صدارتی انتخابی مہم تیزی سے زور پکڑے گی جس پر اس وقت توجہ نہ ہونے کے برابر ہے۔ تاہم اخبار واشنگٹن پوسٹ اور اے بی سی نیوز نیٹ ورک نے ایک تازہ سروے کیا ہے، جس میں دونوں ممکنہ امیدواروں کے بارے میں رائے عامہ تقریباً برابر بٹی ہوئی ہے۔

مجموعی طور عام بالغوں کی 50 فی صد تعداد بائیڈن کے حق میں ہے، جب کہ 44 فی صد ٹرمپ کے حق میں۔

الگ الگ پوچھے جانے والے سوالات میں سے ایک سوال یہ تھا کہ اگر آج انتخاب ہوتے ہیں تو آپ کس کو ووٹ دیں گے۔ اس کے جواب میں 49 فی صد بائیڈن کے حق میں جب کہ 47 فی صد ووٹ ٹرمپ کے حق میں آئے۔

معاشی معاملات کے بارے میں ٹرمپ کی طرف جھکاؤ زیادہ تھا، جب کہ صحت عامہ کے سلسلے میں بائیڈن کی طرف۔ کرونا وائرس کے خلاف جنگ کے بارے میں دونوں کے درمیان فرق بے حد کم تھا۔ ٹرمپ کو 47 فی صد اور بائیڈن کو 43 فی صد ووٹ ملے۔

ابھی تک ڈیموکریٹک پارٹی نے باقاعدہ طور پر اپنا صدارتی امیدوار نامزد نہیں کیا ہے اور پارٹی کے ایک اور اہم امیدوار برنی سینڈرز ابھی تک دست بردار نہیں ہوئے ہیں۔


Source link

اس بارے میں admin

یہ بھی دیکھیں

یوم حق خودارادیت کشمیر پر 5جنوری کو کانفرنس ہوگی

ڈنمارک(پ ر) تحریک کشمیر یورپ ڈنمارک کے زیر اہتمام یوم حق خودارادیت کشمیر کے موقع …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *