مارک میڈوز وائٹ ہائوس کے نئے چیف آف اسٹاف مقرر


امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نھے شمالی کیرولائنا سے ایوان نمائندگان کے رکن مارک میڈوز کو وائٹ ہاؤس کا نیا چیف آف اسٹاف مقرر کردیا ہے۔ وہ مک ملوانی کی جگہ لیں گے جو ایک سال سے زیادہ عرصے سے قائم مقام چیف آف اسٹاف تھے۔

صدر ٹرمپ نے اس بات کا اعلان جمعہ کو ایک ٹوئٹر پیغام میں کیا۔ انھوں نے کہا کہ ملوانی شمالی آئرلینڈ کے لیے امریکہ کے خصوصی ایلچی کے فرائض انجام دیں گے۔

مارک میڈوز تین سال کے دوران صدر ٹرمپ کے تیسرے چیف آف اسٹاف ہوں گے۔ وہ چار بار ایوان نمائندگان کے رکن منتخب ہوچکے ہیں۔ مواخذے کی کارروائی کے دوران وہ صدر ٹرمپ کی پرزور حمایت کرتے رہے۔

صدر ٹرمپ نے ٹوئیٹ میں کہا کہ ”میں مارک کو طویل مدت سے جانتا ہوں اور ان کے ساتھ کام کرچکا ہوں۔ ہمارے تعلقات بہت اچھے ہیں۔”

صدر ٹرمپ نے یہ نہیں بتایا کہ وہ چیف آف اسٹاف کیوں بدل رہے ہیں۔ انھوں نے ٹوئیٹ میں کہا کہ ”میں قائم مقام چیف ملوانی کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں، جنھوں نے بہترین صلاحیتوں سے کام کیا۔”

سابق چیف آف اسٹاف ملوانی کا ایک جملہ گزشتہ دنوں بہت مشہور ہوا۔ انھوں نے ایک نیوز کانفرنس میں کہا تھا کہ ‘کچھ دو کچھ لو’ خارجہ پالیسی کا تسلیم شدہ طریقہ کار ہے۔

ان کے اس بیان اور صدر کے موقف میں بنیادی تضاد تھا، جو کہتے رہے ہیں کہ یوکرین کے ساتھ انھوں نے ‘کچھ دو، کچھ لو’ کی پالیسی کبھی نہیں اپنائی۔


Source link

اس بارے میں admin

یہ بھی دیکھیں

یوم حق خودارادیت کشمیر پر 5جنوری کو کانفرنس ہوگی

ڈنمارک(پ ر) تحریک کشمیر یورپ ڈنمارک کے زیر اہتمام یوم حق خودارادیت کشمیر کے موقع …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *