ایران میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ میں تیزی، ہلاکتیں 54 ہو گئیں

ایران کی وزارتِ صحت نے اتوار کے روز بتایا ہے کہ کرونا وائرس سے نئی ہلاکتوں کے بعد ملک میں اس وبا کے نتیجے میں اب تک 54 افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو چکے ہیں جب کہ تصدیق شدہ مریضوں کی تعداد 978 تک پہنچ گئی ہے۔

وزارتِ صحت کے ترجمان کیانوش جہان پور نے کہا ہے کہ نئے مریضوں کی تصدیق کئی شہروں میں ہوئی ہے جن میں مشہد بھی شامل ہے جہاں ایران کے انتہائی اہم مقبرے موجود ہیں جن کی زیارت کے لیے دنیا بھر سے شیعہ زائرین بڑی تعداد میں آتے ہیں۔

حکومت نے مقبروں کے منتظمین کو یہ مشورہ دیا تھا کہ وہ کچھ عرصے کے لیے اُنہیں زائرین کے لیے بند کر دیں، لیکن اس پر عمل نہیں کیا گیا۔

نئے اعداد و شمار کے مطابق ہفتے کو کرونا وائرس سے مزید 11 افراد ہلاک ہوئے اور 385 نئے مریضوں میں اس مرض کی شناخت ہوئی۔

ایران میں لوگ وائرس سے بچنے کے لیے ہر جگہ ماسک پہن رہے ہیں۔ 29 فروری 2020

ایران میں لوگ وائرس سے بچنے کے لیے ہر جگہ ماسک پہن رہے ہیں۔ 29 فروری 2020

ماہرین کا کہنا ہے کہ ایران میں کرونا وائرس سے ہلاکتوں کی شرح ساڑھے پانچ فی صد ہے جو دوسرے ملکوں کے مقابلے میں بہت زیادہ ہے۔ جس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ اس وائرس میں مبتلا مریضوں کی اصل تعداد اس سے کہیں زیادہ ہے۔

جہان پور نے اپنی بریفگ میں بتایا کہ ایران بھر میں کرونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں اضافے کا رجحان برقرار ہے۔

نئے تصدیق شدہ 385 مریضوں میں سے 170 کا تعلق تہران سے ہے جہاں مسلسل دو ہفتوں سے تعلیمی ادارے بند ہیں۔ اگرچہ بس اور میٹرو چل رہی ہے لیکن ان میں روزانہ جراثیم کش ادویات کا چھڑکاؤ کیا جا رہا ہے۔ اسی طرح مصروف گلیوں اور شاہراؤں پر بھی جراثیم کش ادویات چھڑکی جا رہی ہیں۔

تہران میں حفاظتی کارکن ایک بس میں جراثیم کش ادویات کا چھڑکاؤ کر رہا ہے۔ 25 فروری 2020

تہران میں حفاظتی کارکن ایک بس میں جراثیم کش ادویات کا چھڑکاؤ کر رہا ہے۔ 25 فروری 2020

صحت کے حکام نے بتایا ہے کہ پہلی بار مرکزی صوبے میں بھی 44 مریضوں کی نشاندہی ہوئی ہے۔

عہدے داروں نے حٖفاظتی اقدامات کے پیش نظر شمالی صوبے گیلان کے صدر مقام رشد جانے اور آنے والی تمام پروزیں معطل کر دی ہیں۔ تہران اور قم کے بعد کرونا وائرس کے سب سے زیادہ مریض صوبہ گیلان کے علاقوں سے رپورٹ ہوئے ہیں۔

ایران میں کرونا وائرس کا پہلا کیس 19 فروری کو سامنے آیا تھا۔ یہ وہ تاریخ تھی جب اس وبا سے دو معمر افراد کی ہلاکت ہوئی۔ اس کے بعد سے اب تک کویت، بحرین، عمان، متحدہ عرب امارات، قطر، لبنان، افغانستان اور پاکستان میں کرونا وائرس کے 1100 سے زیادہ مریضوں کی تصدیق ہو چکی ہے جن کی اکثریت ایران کا دورہ کر کے واپس اپنے ملکوں میں گئی تھی۔


Source link

اس بارے میں admin

یہ بھی دیکھیں

یوم حق خودارادیت کشمیر پر 5جنوری کو کانفرنس ہوگی

ڈنمارک(پ ر) تحریک کشمیر یورپ ڈنمارک کے زیر اہتمام یوم حق خودارادیت کشمیر کے موقع …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *