گمنام مسلم ہنر مندوں کی شناخت، اعزاز سے کیا گیا سرفراز– News18 Urdu

الہ آبادکی زاہدہ فاؤنڈیشن اور فاروق جنوں فاؤنڈیشن گذشتہ کئی برسوں سے ایک طرح سے گمنام زندگی گذارنے والے افراد کی تلاش اوران کی گرانقدر خدمات کے اعتراف میں اعزاز دینےکاکام کر رہی ہیں۔

گمنام مسلم ہنر مندوں کی شناخت، اعزاز سےکیا گیا سرفراز

گمنام مسلم ہنر مندوں کی شناخت کرکے انہیں اعزاز سے سرفراز کیا گیا۔

الہ آباد: مسلم معاشرے میں ایسے بہت سے باصلاحیت افراد موجود ہیں، جو گمنامی کا شکار ہیں یا جن کی غیر معمولی صلاحتیوں کا اعتراف نہ تو حکومت نےکیا ہے اورنہ ہی ان کو عوامی سطح پر ابھی تک کوئی پذیرائی حاصل ہو پائی ہے۔ الہ آبادکی دو سماجی تنظیموں نے اب اس کام کا بیڑا اٹھایا ہے۔ سماجی تنظیمیں ‘زاہدہ فاؤنڈیشن’ اور ‘فاروق جنوں فاؤنڈیشن’ گذشتہ 8 برسوں سے ایسے ہونہارمسلم افراد کی تخلیقی صلاحیتوں کو منظر عام پرلانےکا کام کر رہی ہیں، جو سماج کی نظر سے اوجھل ہیں۔ دونوں تنظیمیں گذشتہ کئی برسوں سے ایک طرح سے گمنام زندگی گذارنے والے افراد کی تلاش اور ان کی گرانقدر خدمات کے اعتراف میں اعزاز دینےکاکام کر رہی ہیں۔

تنظیم کی جانب سے الہ آباد میں منعقدہ ایک باوقارتقریب کےدوران ایسی ہی ہونہار شخصیات کو مختلف قسم کے ایوارڈ اوراسناد سے نوازا گیا۔ ‘زاہدہ فاؤنڈیشن’ اور ادبی تنظیم ‘فاروق جنوں’ فاؤنڈیشن کے مشترکہ تعاون سے ہونے والی اس تقریب میں شہرکی ممتازمسلم شخصیات کے علاوہ سماج کے مختلف طبقات سے تعلق رکھنے والےافراد نے بھی شرکت کی۔ اس موقع پر اداکاری کے شعبے میں نیشنل اسکول آف ڈرامہ کے فنکار دانش اقبال، تعلیم کے شعبے سے تعلق رکھنے والےلکھنؤ یونیورسٹی کے پروفیسر عباس رضا نیئر، ادب کے شعبے میں ڈاکٹر ناصحہ عثمانی ،اوقاف کے تحفظ کے لئے جاوید محمد اور طب کے شعبے میں ڈاکٹر محمد بلال کو ان کی گرانقدر خدمات کے اعتراف میں گولڈ میڈل اور توصیفی اسناد سے نواز اگیا۔


تقریب میں الہ آباد کے بشپ پیٹرفینٹ ہوم اور روٹری کلب کے راجیش گپتا نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی۔ واضح رہےکہ فاروق جنوں فاؤنڈیشن ایک ادبی ادارہ ہے۔ اس ادارے کو مشہورترقی پسند شاعر فاروق جنوں کی یاد میں قائم کیا گیا تھا جبکہ زاہدہ فاؤنڈشن مسلم خواتین میں تعلیمی بیداری کےلئےکام کرنے والی معروف سماجی کارکن زاہدہ بیگم کی یاد میں قائم کیا گیا ہے۔فاروق جنوں فاؤنڈیشن کے صدر طارق خان کا کہنا ہےکہ وہ مسلم سماج کے ایسے ہونہار افراد کی خدمات کو عوامی سطح پر لانا چاہتے ہیں، جن کو حکومت یا کسی ادارے کی طرف سے ان کے شایان شان ابھی تک کوئی اعزازنہیں دیا گیا۔ طارق خان کا یہ بھی کہنا ہےکہ مسلم سماج میں صلاحتیوں کی کوئی کمی نہیں ہے۔ اگر ان کو منظر عام پرلایا جائے اور ان کا اعتراف کیا جائے، تو سماج میں پوشیدہ صلاحیتیں نکھر کرسامنے آجائیں گی۔ اس طرح مسلم معاشرے میں پوشیدہ صلاحیتیوں کی حوصلہ افزائی بھی ہو سکےگی۔

 


Source link

اس بارے میں admin

یہ بھی دیکھیں

کیا حکومتی اقدامات سے بھارتی کشمیر میں علیحدگی پسند جماعتیں جمود کا شکار ہو گئی ہیں؟ 

سرینگر —  بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر میں حال ہی میں ہونے والے ضلعی ترقیاتی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *